بھارت کا یک طرفہ اقدام مسترد، شنگھائی تعاون تنظیم کی مسئلہ کشمیر حل کرانے کی پیشکش

بیجنگ (قدرت روزنامہ) بھارت کو ایک اور سبکی کا سامنا، سفارتی محاذ پر پاکستان کو بڑی کامیابی مل گئی، شنگھائی تعاون تنظیم نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کے یک طرفہ اقدام کو مسترد کرتے ہوئے مسئلہ کشمیر حل کرانے کی پیش کش کر دی۔مسئلہ کشمیر سے متعلق دنیا بھر میں تشویش کی لہر، شنگھائی تعاون تنظیم نے مسئلہ حل کرانے کی پیش کش کر دی، سربراہ شنگھائی تعاون تنظیم ولادی میر نوروف نے کہا ہے کہ مسٔلے کے حل کا بنیادی اصول ہے کہ کوئی یکطرفہ اقدامات نہ اٹھائے جائیں۔انہوں نے کہا

کہ اس کے پرامن حل کے لیے بہترین کوششیں کی جائیں گی، ایس سی او کے سربراہ نے کہا کہ پاکستان اور بھارت کے دو طرفہ ایشوز ہی سہی مگر ممبر ممالک ایک طرف خاموش ہو کر نہیں بیٹھ سکتے۔ شنگھائی تعاون تنظیم میں چین، پاکستان، روس، بھارت، کرغستان، تاجکستان اور ازبکستان شامل ہیں۔

بھارت کو ایک بار پھر شدید شرمندگی کا سامنا، چین کا ایسا اقدام کہ مودی سرکار منہ تکتی رہ گئی

چین(قدرت روزنامہ)بھارت کو چین سے ایک بار پھر منہ کی کھانی پڑی۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں غیرقانونی اقدام کرنے پر بین الاقوامی سطح پر مسلسل شرمندگی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور اسے تازہ ترین دھچکا اس وقت لگا جب چین کے وزیر خارجہ وانگ یی نے مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی بدترین صورتحال کے پیش نظر بھارت کا طے شدہ دورہ ملتوی کردیا۔ چینی وزیر خارجہ کا بھارت کا دورہ شیڈول تھا تاہم چین کے وزیر خارجہ نے بھارت کا دورہ اچانک منسوخ کر دیا۔میڈیا رپورٹس میں مزید بتایا گیا ہے کہ چینی وزیر خارجہ نے 9 اور 10ستمبر کو بھارت کا دورہ روزہ دورہ کرنا تھا۔جب کہ دوسری جانب کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق بھارت کے خبر رساں ادارے پریس ٹرسٹ آف انڈیا نے خبر دی ہے کہ چینی وزیر خارجہ کے دورہ ملتوی کرنے سے رواں سال اکتوبر میں چین کے صدر شی جن پنگ اور بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے درمیان طے شدہ ملاقات بھی کھٹائی میں پڑگئی ہے۔خبررساں ادارے نے کہاکہ چینی وزیر خارجہ کے دورہ بھارت ملتوی کرنے کو مقبوضہ کشمیر کی صورتحال سے جوڑا جارہا ہے اور اس سے بھی اہم بات یہ ہے کہ وانگ یی رواں ہفتے کے آخر میں پاکستان کا دورہ کرنے کا سوچ رہے ہیں۔

دریں اثناءایک تقریب سے خطاب میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اس وقت مقبوضہ کشمیر میں کربلا جیسی صورتحال ہے، سعودی عرباور متحدہ عرب امارات کا او آئی سی میں اہم کردار ہوگا، دنیا کہتی ہے معاملہ ڈائیلاگ کے ذریعے حل کریں گے لیکن صورتحال تودیکھیں. شاہ محمودقریشی نے کہا کہ اوآئی سی کافورم اہم ہے، او آئی سی نے مطالبہ کیا بھارت فوری مقبوضہ وادی سے کرفیو اٹھائے، مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہورہی ہے. وزیرخارجہ نے کہا کہ ہمارے لوگ عجلت کامظاہرہ کرتے ہیں، تھوڑا صبر کرنا چاہیے، سفارتکاری میں تھوڑا وقت لگتا ہے کیونکہ پوائنٹ بنانا پڑتا ہے، سعودی عرب اور یو اے ای کی بھارت میں اربوں ڈالرکی سرمایہ کاری ہے.

’’اب کوئی مائی کا لال پاکستان کرکٹ ٹیم کو شکست دے کر دکھائے۔۔۔۔‘‘ مخالف ٹیم کو دھول چٹا دینے والا پاکستان کو ایک اور شعیب اختر مل گیا

پورٹ آف سپین (قدرت روزنامہ) پاکستان کے نوجوان فاسٹ باﺅلر محمد حسنین نے کیریبین پریمیر لیگ (سی پی ایل) کے اپنے پہلے ہی میچ میں دھوم مچا دی اور عمدہ کارکردگی کے ذریعے اپنی ٹیم کو فتح سے ہمکنار کروایا۔تفصیلات کے مطابق19سالہ محمد حسنین سی پی ایل میں ٹرنباگو نائٹ رائیڈرز کی نمائندگی کر رہے ہیں جس کا مقابلہ سینٹ کٹس اینڈ نیویس پیٹریاٹس سے ہوا جس میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے محمد حسنین نے 36رنز کے عوض 3 کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھائی جن میں ہم وطن سینئر بلے باز محمد حفیظ کی وکٹ بھی شامل ہے۔واضح رہے کہ پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کا چوتھا ایڈیشن جیتنے والی فرنچائز کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے محمد حسنین کو دریافت کیا اور انہیں ٹیم میں جگہ دی جنہوں نے اپنی کارکردگی کی بدولت آئی سی سی ورلڈکپ 2019 ءکے لیے قومی سکواڈ میں بھی جگہ بنائی تاہم وہ میگا ایونٹ کا ایک میچ بھی نہیں کھیل سکے تھے۔محمد حسنین اب تک5ون ڈے انٹر نیشنل اور ایک ٹی ٹونٹی انٹر نیشنل میچ میں پاکستان کی نمائندگی کرچکے ہیں ۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق لاہور میں پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیف ایگزیکٹو وسیم خان کے ہمراہ قومی ٹیم کے نئے ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر مصباح الحق نے پریس بریفنگ دی۔اس دوران مصباح الحق نے پی سی بی سے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ کرکٹ بورڈ نے مجھ پر اعتماد کا اظہار کیا اور مجھے 2 اہم ذمہ داریاں سونپ دی گئیں۔مصباح الحق کا کہنا تھا کہ میں جو کچھ بھی ہوں، میں نے بطور کرکٹر جو بھی حاصل کیا وہ پاکستان کے نام کے بغیر ممکن نہیں تھا،

جو بھی کرکٹ کھیلی اور عزت ملی اگر اس سے پاکستان کا نام ہٹا دیں تو کچھ نہیں ہے، لہٰذا میں اس ملک کا اور لوگوں کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ہیڈکوچ اور چیف سیلکٹر کی ذمہ داریوں پر ان کا کہنا تھا کہ یہ میرے لیے فخر کی بات ہے، تاہم جب اختیار آتا ہے تو وہ آپ کا امتحان ہوتا ہے جسے ایمانداری سے پورا کرنا ہوتا ہے لیکن یہ آسان نہیں۔انہوں نے کہا کہ میری کوشش ہوگی کہ میں پوری ایمانداری اور طاقت سے اپنا کردار ادا کروں اور پاکستان کرکٹ کی بہتری، اس کی ترقی، پیشہ وارانہ صلاحیت اور نظام کے لیے کام کروں۔اس موقع پر صحافیوں کی جانب سے مختلف سوالات کیے گئے، جس کا وسیم خان اور مصباح الحق نے جواب دیا۔وسیم خان نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ جو سلیکشن کمیٹی پہلے تھی وہ ختم ہوگئی لیکن جو 6 ہیڈ کوچز تھے وہ چیف سلیکٹر کے ساتھ کام کریں گے کیونکہ وہ ڈومیسٹک کرکٹ میں تمام چیزیں دیکھتے ہیں۔

جی آئی ڈی سی آرڈیننس واپس لیا جانا بد قسمتی ہے، تاجر برادری

لاہور(قدرت روزنامہ) حکومت کا مختلف انڈسٹریز کو گیس انفرااسٹرکچر ڈیولپمنٹ سیس (جی آئی ڈی سی) کے 416 ارب روپے کے بقایاجات کو 50 فیصد رعایت کے ساتھ ادا کرنے کے صدارتی آرڈیننس جاری کرنے اور اسے ایک ہفتے میں ہی واپس لینے پر تاجر برادری نے برہمی کا اظہار کیا۔ آرڈیننس واپس لیے جانے کا مطلب ہے کہ کئی سالوں سے حکومت اور ڈیفالٹرز کے درمیان جاری قانونی جنگ آئندہ بھی جاری رہے گی۔ واضح رہے کہ پی ٹی آئی حکومت نے 27 اگست کو صدارتی آرڈیننس جاری کیا تھا جس کے تحت صنعتوں سے 420 ارب روپے کے جی آئی ڈی سی تنازع کے حوالے سے تصفیے کی پیشکش کی گئی تھی۔ آرڈیننس کے تحت صنعت، فرٹیلائزر اور سی این جی کے شعبے 50 فیصد بقایاجات کو 90 روز میں جمع کراکر مستقبل کے بلوں میں 50 فیصد تک رعایت حاصل کرسکتے ہیں جبکہ انہیں اس حوالے سے عدالتوں میں موجود کیسز بھی ختم کرنے ہوں گے۔ اس آرڈیننس کو جاری کرنے کے بعد اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے حکومت پر شدید تنقید کی جارہی تھی۔ فیصل آباد کے پاکستان ٹیکسٹائل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین خرم مختار کا کہنا تھا کہ 'آرڈیننس کو واپس لیا جانا بدقسمتی ہے، حکومت اور صنعت دونوں نے نئے آغاز کا موقع گنوا دیا'۔ان کا کہنا تھا کہ فیصلے سے پنجاب کی صنعتوں کو فرق نہیں پڑے گا کیونکہ زیادہ تر صارفین اپنے بقایا جات کا بڑا حصہ ادا کر رہے ہیں تاہم اس سے کراچی سمیت سندھ کی صنعتیں متاثر ہوں گی کیونکہ انہوں نے اس پر حکم امتناع لے رکھا ہے اور وہ جی آئی ڈی سی کے بقایاجات ادا نہیں کر رہے ہیں'۔ اس ہی طرح کے خیالات کا اظہار جی آئی ڈی سی میں آنے والی مختلف صنعتوں سے تعلق رکھنے والی دیگر کاروباری شخصیات نے بھی کیا۔ آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی کے سابق چیئرمین ایس ایم تنویر کا کہنا تھا کہ 'معاہدے کے اطلاق سے حکومت کو مستقبل میں مستقل آمدنی حاصل کرنے کا موقع ملتا اور صنعتوں کو جی آئی ڈی سی کی لاگت میں کمی کا موقع ملتا جبکہ ان کا عدالتی کارروائیوں کا خرچ بھی بچ جاتا'۔ فرٹیلائزر کمپنی کے ایگزیکٹو کا ماننا ہے کہ اس معاہدے سے صنعت کو یوریا کی قیمت کم رکھنے کے لیے مدد حاصل ہوتی۔نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست پر انہوں نے بتایا کہ 'فرٹیلائزر انڈسٹری سے آرڈیننس کے واپس لیے جانے سے سب سے بڑا نقصان یہ ہوا ہے کہ ہمیں اب اپنی قیمتوں پر نظر ثانی کرنی ہوگی، ہم حالیہ گیس کی قیمتوں میں اضافے کو برداشت کرتے ہوئے یوریا کی قیمتوں کو موجودہ سطح پر برقرار رکھے ہوئے ہیں کیونکہ حکومت نے ہمیں جی آئی ڈی سی بقایاجات کے تصفیے اور مستقبل میں اس کی شرح میں کمی کی یقین دہانی کرائی تھی'۔ آل پاکستان سی این جی ایسوسی ایشن کے نمائندے غیاث پراچہ نے وزیر اعظم کے فیصلہ پر شدید برہم نظر آئے۔ ان کا کہنا تھا کہ 'میری نظر میں حکومت اور کاروباری برادری کو تکنیکی تنازع کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنے کی کوشش کرنی چاہیے نہ کہ ہر معاملے کو عدالت لے کر جائیں، جی آئی ڈی سی آرڈیننس نے بقایاجات کے مسئلے کو ہمیشہ کے لیے حل کرنے کا موقع فراہم کیا تھا، میں دونوں حکومتوں اور کاروباری افراد سے گزارش کروں گا کہ ایک جگہ بیٹھ کر عدالت کے باہر اس معاملے کو حل کریں'۔

آصٖف زرداری کے رائٹ ہینڈ کی پلی بارگین ۔۔۔۔ زرتاج گل بھی میدان میں آ گئیں ، ناقابل یقین اعلان کر دیا

اسلام آباد (قدرت روزنامہ)وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل نے کہا ہے کہ اومنی گروپ کے ذریعے منی لانڈرنگ کرنے والوں نے اب جب مان لیا کہ کیسے انہوں نے سندھ کے غریب عوام کو لوٹا تو اچھا ہے پیسے واپس قومی خزانے میں آئیں، مسئلہ کشمیر کو ماضی میں دنیا میں اتنا اجاگر نہیں کیا گیا جتنا موجودہ حکومت نے کیا ہے، کشمیر کے معاملہ پر اپوزیشن کے کچھ لیڈروںکا رویہ افسوسناک ہے۔سماجی رابطہ کی ویب سائٹ پر اپنے ٹویٹ میں زرتاج گل نے کہا کہ اومنی گروپ کے ذریعے منی لانڈرنگ کرنے والوں نے اب جب مان لیا کہ کیسے سندھ کے غریب عوام کو لوٹا ہے، یہ اچھا اقدام ہے اب یہ لوٹے ہوئے پیسے واپس قومی خزانہ میں آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ میں اس بات پر تفصیل سے کہا گیا کہ پلی بارگین کے ذریعے قومی مجرم پیسہ دے کر اپنے آپ کو بچا لیں، یہ ہمیں قابل قبول نہیں۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کے معاملہ پر اپوزیشن کے کچھ لیڈرز کا رویہ افسوسناک اور قابل مذمت ہے

جو کشمیریوں سے یکجہتی دکھانے کی بجائے سیاست کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کا معاملہ کبھی دنیا میں اتنا اجاگر نہیں ہوا جتنا اس حکومت نے کیا ہے، ماضی کی حکومتوں کی مجرمانہ غفلت اور ناکامیوں نے بھارت کے کیس کو مضبوط کیا لیکن اب حکومت پوری دنیا میں کشمیریوں کا مقدمہ بخوبی لڑ رہی ہے جبکہ اپوزیشن اب بھی کشمیر کا سچا ساتھ دینے کے بجائے سیاست میں مصروف ہے۔ زرتاج گل نے کہا کہ اپوزیشن کو پارلیمان کی پیشرفت سے غرض نہیں، ان کو صرف اپنے بدعنوان لیڈرز کے پروڈکشن آرڈر کی فکر ہوتی ہے ۔ ساتھ دینے کے بجائے سیاست میں مصروف ہے۔ زرتاج گل نے کہا کہ اپوزیشن کو پارلیمان کی پیشرفت سے غرض نہیں، ان کو صرف اپنے بدعنوان لیڈرز کے پروڈکشن آرڈر کی فکر ہوتی ہے ۔

’’ ہر چیز کو بِدعت مت بناؤ، غمِ حسینؑ میں رونا سنتِ رسولﷺہے۔۔۔ ‘‘ جب فرشتہ حضور ﷺ کو امام حسینؑ کی شہادت کی خبر دینے آیا تو آقا کریم نے اُس وقت کیاکِیا؟ مولانا طارق جمیل کا خوبصورت خطاب

لاہور(قدرت روزنامہ)معروف عالم دین مولانا طارق جمیل جہاں اسلامی حلقوں میں مفاہمت ے لیے کوشاں رہتے ہیں وہیں وہ تبلیغی کاموں اور درس و بیانات دینے بھی مصروف نظر آتے ہیں ۔ مولانا طارق جمیل محرم الحرام کی فضیلت بیان کرتے ہوۓ کہا کہ ” 10 محرم الحرام ایک داستان ہی نہیں بلکہ ایک سبق ہے یہ قربانی کی لازوال مثال ہے، لوگ شہید ہو کر عزت پاتے ہیں لیکن میرے مطابق حسین ؑ نے شہید ہو کر شہادت کو عزت بخشی ہے ۔ لوگ قربانی دے کر بڑا بنتے ہیں لیکن حسینؑ نے خود قربان ہوکر قربانی کوبڑا بنادیا ۔لوگ اللہ کی راہ میں لٹ کر ، پٹ کر کامیابی کے زینے حاصل کرتے ہیں لیکن میرے حسینؑ نے اللہ کی راہ میں لٹ کر ، پٹ کر ، مٹ کر کامیابی کو عزت کا مفہوم پہنا دیا اور عزت کا لباس پہنا دیا ۔ میرے تو پیارے نبی ؐ نے خود کہا کہ ” امام حسین ؑ اور امام حسنؑ جنت کے نوجوان سردار ہیں”۔ جنت تو پلےت ہی بہت خوبصورت ہے لیکن اللہ حسن ؑ اور حسینؑ کو سردار بناکر جنت کو اور خوب صورتی بخش دیگا ۔ اللہ تعالی فرماۓ گا ” اے جنت ! میں نے تمھیں حسنؑ اور حسینؑ کے اضافے سے اور زیادہ خوبصورت بنا دیا ۔ شہادت کو حسینؑ نے خوبصورت بنایا ، قربانی کو آل رسول ؐ نے خوبصورت بنایا۔ کامیابی کو آل رسولؐ نے ، مفہوم پہنایا ، اللہ کی راہ میں لٹ کر جینا حسین ؑ نے سکھایا۔اللہ کو پالینے کے لیے کہاں تک جایا جاسکتا ہے، کربلا ایک پیغام ہے ۔ حسین ؑ پاک کے لیے رونا بھی سنت ہے ۔ایک مرتبہ آپؐ نے ام سلمہ سے فرمایا ” ام سلمہؒ ! آج ایک فرشتہ ملنے آرہا ہے ۔ بہت خاص ہے کسی کو بھی اندر مت آنے دینا۔ راستے میں ام سلمہؒ کھڑی ہو گئیں ۔ اسی اثنا ء میں امام حسین ؑ چھوٹے بچے گھر آگئے اور ام سلمہ ٰ ؒ نے دروازے پر روک لیا اور وہ رونے لگے جب وہ رونے لگے تو ام سلمہٰ ؒ نے چھوڑ دیا ۔ تھوڑی دیر کے بعد میرے نبی ؐ کی اندر سے زور زور سے رونے کی آواز آئی اور ام سلمہٰ سے رہا نہ گیا اور بھاگتی ہوئی اندر پہنچیں ، دیکھا کہ آپﷺ نے امام حسین ؑ کو اپنے سینے سے لگایا ہوا ہے اور رو رہے ہیں ۔ ام سلمہٰؒ کے سوال پر آپﷺ نے فرمایا کہ ” سلمہٰؒ جو فرشتہ آج ابھی آیا تھا وہ بتا رہا تھا کہ آپ کی امت ، آپکے اس نواسے مبارک کو قتل کردیگی اور جہاں انکا خون گرے گا وہ مٹی بھی اس فرشتے نے مجھے دکھائی ۔ ابھی حسین ؑ کی شہادت بھی نہ ہوئی تھی کہ رویا جا رہا تھا تو ہم لوگ تو امام حسینؑ کی شہادت پر روتے ہیں اور دنیا قیامت کے واقعے پر روتی رہے گی ۔ ہر چیز کوبدعت مت بناؤ ۔ ہر سال ایسا ہی معلوم ہوتا ہے جیسےکہ ابھی اس سال ہی امام حسینؑ کی شہادت ہوئی ہے ۔ اگر ٹیپو سلطان کی بات کروں تو اس شخص کو بھی جب انگریزوں نے شہید کیا تو پورے لشکر نے توپوں کی سلامی اور عزت و احترام کیساتھ دفن کیا جبکہ میرے نبی پاک ﷺ کے نواسے کو کفن بھی نہ دیا گیا ، جنازہ بھی نہ پڑھنے دیا گیا اور دفن بھی کرنےدیا گیا ۔ اگلےدن پتہ چلا کہ بنو اسد کے بارے میں پتہ چلا عمر بن سعد کو کہ وہ انکو دفنانے والے ہیں اور رات و رات انکو مٹی میں دبا دیا اور اوپر پانی چھوڑ دیا تاکہ پتہ نہ چلے کی حسینؑ وجود مبارک کہاں ہے۔اگلے دن بنو اسد کابوڑھا آیا اور جب پانی خشک ہوگیا تو اس نے مٹی کو اٹھا اٹھا کرسونگھنا شروع کردیا اور سونگھتے سونگھتے ایک جگہ پر رک گیا اور کہا کہ یہاں میرے حسین ؑ مدفون ہیں کیوں کہ یہاں سے جنت کی خوشبو آرہی ہے ۔حسینؑ جنت کے سردار ہیں اور انکی قبر مبارک بھی جنت کی خوشبوسے لبریز ہے “۔ لعنت ہو یزد پر ، انکی ارواح پر اور انکی قبروں پر جنھوں نے آل رسول ﷺ کو اپنی تلواروں کے گھاؤ دیے ۔”مولانا طارق جمیل کا کیا کہنا تھا ؟

سب پھڑے جان گے۔۔۔ جج ارشد ملک کی ویڈیو کا معاملہ نیا رخ اختیار کر گیا، برطانیہ سے کونسی شخصیت پاکستان آرہی ہے؟ مریم نواز کے لیے نئی مشکل

اسلام آباد(قدرت روزنامہ) احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کی ویڈیو کا فرانزک کرنے والی برطانوی کمپنی کے نمائندے کا پاکستان آنے کا امکان ہے۔ جج ارشد ملک کی ویڈیو بنانے والے شخص ناصر بٹ نےایک برطانوی کمپنی سے ویڈیوز کا فرانزک بھی کروایا۔ اور ان میں سے ایک ویڈیو میں احتساب عدالت کے سابق جج ارشد ملک ایک اہم آئینی عہدیدار (جو اب ریٹائر ہو چکے ہیں) کے حوالے سے کہا کہ ”ملک اس وقت حالت جنگ میں ہے اور اس لیے یہ بھول جائیں کہ قانون کیا کہتا ہے اور نواز شریف کو سزا دیں۔”صحافی انصار عباسی نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ ناصر بٹ نے برطانوی کمپنی سے جج ارشد ملک کی اُن تمام خفیہ ویڈیوز اور آڈیوز کا فرانزک کروایا ہے جو انہوں نے ریکارڈ کی تھیں۔ ناصر بٹ کا تعلق ن لیگ سے ہے جنہیں شریف فیملی کا قریبی بھی سمجھا جاتا ہے۔ اسلام آباد ہائی کورٹ میں نواز شریف کی ضمانت کیس میں اپنا بیان اور ویڈیوز کی فرانزک رپورٹ پیش کرنا چاہتے ہیں۔ کیس کی سماعت رواں ماہ کے تیسرے ہفتے میں ہوگی۔ اس حوالے سے اطلاعات ہیں کہ عدالت کو پیشکش کی جائے گی کہ جس برطانوی کمپنی نے ویڈیوز اور آڈیوز کا فرانزک کیا ہے وہ بھی اسلام آباد ہائی کورٹ میں ویڈیو لنک کے ذریعے اپنا بیان جمع کروا سکتی ہے یا پھر سیکورٹی فراہم کیے جانے کی صورت میں کمپنی کا نمائندہ پاکستان آ سکتا ہے۔

ذرائع نے دعویٰ کیا کہ اگرچہ وہ دیگر ویڈیوز (جنہیں ابھی تک جاری نہیں کیا گیا) کا بھی برطانوی ماہرین سے فرانزک کروایا گیا ، یہ ویڈیوز اور ان کی فرانزک رپورٹ بھی عدالت میں اس مرحلے پر پیش کی جائیں گی۔ ناصر بٹ اور شریف خاندان نے ان ویڈیوز کو اپنے سینے سے لگا کر محفوظ کر رکھا ہے۔ ان ویڈیوز میں جج ارشد ملک کا مبینہ اعتراف شامل ہے کہ ان پر دو آئینی عہدیداروں (جن مین سے ایک ریٹائر ہو چکا ہے) نے دباؤ ڈال کر نواز شریف کے خلاف فیصلہ کرنے پر مجبور کیا۔ ریٹائرڈ افسر نے جج ارشد ملک سے مبینہ طور پر کہا تھا کہ نواز شریف سزا دو، قانون چاہے کچھ بھی کہتا ہو کیونکہ ملک حالت جنگ میں تھا۔ جج ارشد ملک نے جب یہ کہا کہ سابق وزیراعظم کو سزا دینے کے لیے ٹھوس ثبوت موجود نہیں تو دوسرے عہدیدار نے مبینہ طور پر ارشد ملک پر دباؤ ڈالا کہ نواز شریف کو کم از کم دس سال جیل کی سزا سنائی جائے۔

غزوہ ہند کا ذکر نبی کریم ﷺ نے ساڑھے 14 سوسال پہلے کیا تھا جسکی ابتدا ہوچکی ہے۔۔۔۔ آنے والے وقتوں میں کیا ہونے والا ہے، پاکستانیوں کو پیشگی آگاہ کر دیا گیا

اسلام آباد(قدرت روزنامہ) وزیر مملکت علی محمد خان نے کہا ہے کہ غزوہ ہند کا آغاز ہوچکا اب ہم نے جہاد کرنا ہے۔وزیر مملکت علی محمد خان نے اسلام آباد میں کشمیر سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کشمیرپرحملہ کرچکا اب ہم نے جواب دیناہے، ہم نےماضی میں بھی جہادکیاہےاوراب بھی کریں گے، ہم نے جہادتلوارسےبھی کیااورقلم سےبھی کرینگے، ہم نےفیصلہ کرناہےکس کس جگہ پرکیاکیاحملےکرنےہیں، غزوہ ہندکی ابتداہوچکی ہے، بھارت حملہ کرچکاہے،ہم اس کاجواب دےرہےہیں۔علی محمد خان کا کہنا تھا کہ کشمیرمیں 80سال کی خاتون سےان کےپوتوں کےسامنےزیادتی کی جارہی ہے، اس گھر کاسوچیں جہاں زیادتی کوبطورجنگی ہتھیاراستعمال کیاجارہاہے، جوکہتے ہیں کہ جب بھارت ہم پر حملہ کرے گا تو اس کا جواب دیں گے، میں کہتا ہوں کہ بھارت نے ہم پر حملہ کردیا ہے اور ہم نے اس کے جواب کا فیصلہ کرنا ہے۔وزیر مملکت علی محمد خان نے مزید کہا کہ اسرائیل مسلمانوں کا ازلی دشمن ہے، جس کو اسرائیل سے محبت ہے یا اسرائیل سے تعلق بڑھانا چاہتے ہیں وہ اسرائیل چلا جائے، ورنہ ہم انہیں بحیرہ عرب میں پھینک دوں گیں گے۔ وزیر مملکت علی محمد خان کا کہنا ہے کہ غزوہ ہند جس کا ذکر نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ساڑھے 14 سو سال پہلے کیا تھا اس کی ابتدا ہوچکی۔اسلام آباد میں کشمیر سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے وزیر مملکت علی محمد خان نے کہا کہ لوگ پوچھتے ہیں کہ بھارت حملہ کرے گا تو ہم کیا کریں گے، بھارت حملہ کرچکا ہے اور ہم اس کا جواب دے رہے ہیں۔وزیر مملکت نے کہا کہ جنگ کی عملی ابتدا ہوچکی اب ہم نے فیصلہ کرنا ہے کس طرح جواب دینا اور وار کرنا ہے، وہ جواب قلم کی صورت میں بھی ہے، زبان کی صورت میں جہاد باللسان اور جہاد بالجان کی صورت میں ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں فیصلہ کرنا ہے کہ کس کس جگہ پر کیا کیا کرنا ہے۔علی محمد خان نے کہا کہ غزوہ ہند جس کا ذکر نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ساڑھے 14 سوسال پہلے کیا تھا اس کی ابتدا ہوچکی۔انہوں نے کہا کہ جو جو شخص صبح اٹھ کر کشمیریوں کے حق میں میسیج کرتا ہے وہ اس غزوہ ہند میں اپنا حصہ ڈالتا ہے۔وزیر مملکت نے کہا کہ جہاد سے لوگوں کو ڈرایا نہ کریں یہ اسلام کا بنیادی ستون ہے، ہم جہاد کررہے ہیں اور کریں گے، ہم قلم اٹھا کر اور زبان سے جہاد کررہے ہیں تلوار اٹھاکر بھی کریں گے۔علی محمد خان نے کہا کہ ہم ہر وقت اپنی جان کو ہتھیلی پر رکھ کر جہاد کررہے ہیں، جب ایک بچہ گھر سے باہر نکلا اور واپس اپنی ماں کے پاس آیا تو اس کے چہرے پر پیلیٹ گنز کے نشانات ہیں، یہ ہمیں بھارت کا جواب ہے کہ تم حق کی بات کروگے ہم تمہارے بچوں کو اندھا کریں گے، ہم تمہاری بچیوں کا ریپ کریں گے۔ان کا کہنا تھا کہ اب ہم تو اس جنگ کے لیے تیار ہیں، ہم اقوام متحدہ اور یورپی یونین جاتے رہے ہیں اور جائیں گے، امت مسلمہ کے خلاف جو بات کرتا ہے ظلم کرتا ہے۔ وزیر مملکت نے کہا کہ امت مسلمہ وہ ہے جو ڈیڑھ ارب مسلمان دنیا میں موجود ہیں، اس ملک نے ہم سب نے مل کر انہیں اٹھانا ہے۔علی محمد خان نے کہا کہ لوگ کہتے ہیں کہ کشمیریوں کو حق رائے دہی دیا جائے یعنی دستخط کرکے یا ہاتھ سے ووٹ ڈال کر کہہ دیں کہ میں نے بھارت یا پاکستان کے ساتھ جانا ہے، کشمیری تو مر کر حق رائے دہی کا استعمال کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کشمیری جنازوں کو پاکستان کے جھنڈوں میں لپیٹتے ہیں، وہ یہ پیغام دیتے ہیں اور کہتے ہیں کہ ہم پاکستانی ہیں پاکستان ہمارا ہے۔علی محمد خان نے کہا کہ بھارت یہ سمجھتا ہے کہ اس نے کشمیر کو اپنا حصہ بنالیا میں کہتا ہوں کہ نریندر مودی نے 5 اگست کو بھارت کی موت کے پروانے پر دستخط کیے، اس مسلمان قوم کو، کشمیری کو، ان کے جذبہ جہاد، پاکستانیت کو، کلمہ حق کو تم نے بہت کم جج کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ جب علی گیلانی نے کہا کہ وہ وقت نزدیک آنے والا ہے کہ دنیا بھر کے مسلمان علی گیلانی کی کال پر اٹھیں گے۔وزیر مملکت نے کہا کہ بھارت کا خیال ہے کہ وہ کشمیر کو اپنے ساتھ جوڑ لے گا میں سمجھتا ہوں کہ نریندر مودی نے دہلی جہاں اس کی حکومت ہے، اس کے خاتمے پردستخط کیے ہیں۔علی محمد خان نے کہا کہ ہم نے فیصلہ کرنا ہے کہ وہ وقت کب آنا ہے؟ آج آنا ہے یا کل آنا ہے، بھارت نے اپنا آخری پتہ کھیل لیا ہے، اب ہم نے اپنے پتے کھیلنے ہیں کوئی ہمیں کمزور نہ سمجھے۔انہوں نے کہا کہ جب ہم 313 تھے تب کافروں کو شکست دے سکتے تھے آج ہم 22 کروڑ یہاں ہیں اور ایک ارب سے زائد پوری دنیا میں ہیں۔میں نے جب دنیا میں باہر جا کر دیکھا تو یہ سمجھتا ہوں کہ عام مسلمان پاکستان کو اپنا روحانی یا جذباتی رہنما سسمجھتی ہے کیونکہ پاکستان ایک نظریے کی بنیاد پر بنا ہے۔

آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کس کس شہر میں طوفانی برش کا خطرہ ہے؟؟ محکمہ موسمیات نے بڑی پیش گوئی کردی

اسلام آباد (قدرت روزنامہ) نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی نے یکم جولائی سے 5ستمبر تک ہونیوالی بارشوں اور سیلاب کے نتیجے میں ہونیوالے نقصانات کے حوالے سے اعداد و شمار جاری کردیئے ہیں۔ ترجمان این ڈی ایم اے کے مطابق سیلاب اور بارشوں کے نتیجے میں ملک بھر مجموعی طور پر 235 افراد جاں بحق ہوئے۔ سیلاب اور بارشوں سے سب خیبرپختونخوا میں سب سے زیادہ جانی نقصان ہوا جہاں 78افراد جاں بحق ہوئے ہوئے۔ترجمان نے بتایا کہ حالیہ بارشوں اور سیلاب کے نتیجے میں مجموعی طور پر 169افرادزخمی ہوئے۔ انہوں نے بتایا کہ بارشوں اور سیلاب کے نتیجے میں 403گھروں کو جزوی اور 272گھر مکمل طور پر تباہ ہوئے۔ترجمان نے بتایا کہ حالیہ بارشوں اور سیلاب سے 6مساجد شہید ہوئیں، 226دکانیں تباہ ہوئی اور تین بجلی گھروں کو نقصان پہنچا۔انہوں نے بتایا کہ حالیہ بارشوں اور سیلاب کے نتیجے میں اٹھارہ پلوں کو نقصان پہنچا۔ انہوں نے بتایا کہ این ڈی ایم اے نے بارشوں اور سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں 7ہزار 68ٹینٹس تقسیم کیے۔ ترجمان این ڈی ایم اے نے بتایا کہ تربیلا ڈیم اور چشمہ بیراج پر پانی ذخیرہ کرنے کی گنجائش ختم ہوگئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران راولپنڈی ہزارہ ڈویژن اور کشمیر میں گرج چمک کیساتھ بارش کا امکان ہے۔کہ تربیلا ڈیم اور چشمہ بیراج پر پانی ذخیرہ کرنے کی گنجائش ختم ہوگئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران راولپنڈی ہزارہ ڈویژن اور کشمیر میں گرج چمک کیساتھ بارش کا امکان ہے۔ گنجائش ختم ہوگئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران راولپنڈی ہزارہ ڈویژن اور کشمیر میں گرج چمک کیساتھ بارش کا امکان ہے۔کہ تربیلا ڈیم اور چشمہ بیراج پر پانی ذخیرہ کرنے کی گنجائش ختم ہوگئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آئندہ چوبیس گھنٹوں کے دوران راولپنڈی ہزارہ ڈویژن اور کشمیر میں گرج چمک کیساتھ بارش کا امکان ہے۔

وقت کیا سے کیا بنا دیتا ہے۔۔۔ انتقال کے بعد ’ عابد علی‘ کے ساتھ کیا سلوک ہوگیا؟ لیجنڈری اداکار کی بیٹی ’ رحمہ ‘ نے روتے ہوئے ایسا پیغام جاری کر دیا کہ پورا پاکستان افسردہ ہوگیا

کراچی(قدرت روزنامہ) گزشتہ روز اداکار عابد علی کراچی کے ایک ہسپتال میں انتقال کر گئے تھے ۔ عابد علی کئی سالو ں سے دل کے عارضے میں مبتلا تھے اور گزشتہ دو ماہ سےہسپتال میں زیر علاج تھے ۔ اداکار عابدعلی کے انتقال پر شوبز انڈسٹری میں سوگ پایا گیا ۔ پاکستان ٹیلی ویژن کے کلاسیک عہد میں وارث جیسے ڈرامے سے شہرت حاصل کرنے والے معروف اداکار عابد کی عمر 67 سال تھی۔ مرحوم اداکار عابد علی کی بیٹی رحمہ علی باپ کی موت پر انتہائی دکھی دکھائی دیں ۔ انھوں نے ہسپتال سے ہی ایک ویڈیو پیغام جاری کیا جس میں انھوں نے اپنی سوتیلی ماں پر بدسلوکی کا الزام لگایا اور باپ کی لاش کو اپنے ساتھ لے جانے کی شدید مذمت کی ۔ انھوں نے ہسپتال سے جاری کیے گئے ایک ویڈیو پیغام میں کہا کہ ” میں آپ سب کو ایک حقیقت بتانا چاہتی ہوں ، پاپا کی دوسری بیوی رابعہ نورین ، انکی باڈی (لاش ) لیکرہسپتال سے چلی گئی ہیں ۔یہاں ہسپتال میں ، میں ، میری ماں ، میری پھوپھی اور پھوپھا موجود ہیں اور ہمیں کسی نے بھی باپ کی لاش نہیں دی ہے ۔ اب ہم یہ بھی نہیں جانتے کہ کہاں جائیں ہم لوگ ۔ ہم لوگ یہ بھی نہیں جانتے کہ وہ باپ کی لاش لیکر کہاں گئی ہیں”۔ اداکار عابد علی کی بیٹی رحمہ علی نے مزید کہا کہ” مجھے میری پھو پھو نے پیغام دیا ہے کہ ہم تمام عورتیں جن میں ، میں ، میر ی ماں اور میری پھوپھو شامل ہیں ، ہم رابعہ نورین کے گھر نہیں جاسکتی کیوں کہ رابعہ نورین نے اپنے گھر آنے سے منع کیا ہے ۔ میری سوتیلی ماں نے ہمیں جنازے کے متعلق بھی نہیں بتایا ہے کہ جنازہ کب اور کہاں ہوگا ۔ اور اب ہم لوگ یہ بھی نہی جانتے کہ ہم سب لوگ جو عابد علی کے بیٹیاں اور بہنیں ہیں کیا کریں ؟ “۔ عابد علی کی بیٹی کا مزید کیا کہنا تھا؟ ویڈیو آہ بھی دیکھیں:یاد رہےکہ اداکار عابد علی نے پہلی بیوی سے علیحدگی کے بعد معروف اداکار رابعہ نورین سے شادی کر لی تھی ۔